وزیر تعلیم سنٹرل اسکول میں زیر تعلیم بچوں کی فیس معاف کریں: ارجمن بانو

محترمہ ارجمن بانو نے وزیر تعلیم رمیش پوکھریال نشنک کو خط لکھ کر سنٹرل اسکول میں پڑھنے والے اقتصادی طور پر کمزور بچوں کی فیس معاف کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

نئی دہلی: نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کی نیشنل مہیلا کانگریس کی دہلی اکائی کی صدر ارجمن بانو نے صدر جمہوریہ، وزیر اعظم سمیت وزیر تعلیم کو خط لکھ کر سنٹرل اسکول میں پڑھنے والے اقتصادی طور پر کمزور بچوں کی فیس معاف کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کووڈ – 19 کے دور میں جب لوگوں کی نوکریاں چلی گئی ہیں، کاروبار ٹھپ ہوگئے ہیں، لوگوں کے کھانے پینے کے لالے پڑ رہے ہیں، ایسی صورت حال میں وہ بچوں کے اسکول کی فیس کیسے ادا کر پائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سنٹرل اسکول میں صرف سرکاری ملازمین کے بچے ہی نہیں پڑھتے بلکہ دوسرے بچے بھی پڑھتے ہیں، جنہیں فیس کی ادائیگی بھاری پڑ رہی ہے۔

محترمہ ارجمن بانو نے اپنے خط میں وزیر تعلیم رمیش پوکھریال نشنک کو لکھا ہے کہ چوں کہ یہ معاملہ بے حد حقیقت پر مبنی ہے اور کووڈ – 19 کو دھیان میں رکھتے ہوئے آپ سے یہ گزارش ہے کہ سنٹرل اسکول میں بچوں کی فیس معاف کرنے کے سلسلے میں اپنی سطح سے فوری کاررورائی کرنے کی تکلیف گوارہ کریں، جس سے بچوں کے والدین کو کچھ راحت مل سکے۔

اس معاملے کو پارلیمنٹ سمیت دیگر پلیٹ فارم پر اٹھانے کی اپیل

مسٹر نشنک کے علاوہ محترمہ ارجمن بانو نے اس کی کاپی صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند، وزیر اعظم نریندر مودی، پارٹی کے صدر شرد پوار، رکن پارلیمنٹ پرفل پٹیل، محترمہ فوزیہ خاں، مسٹر ٹی پی پتھامبرن، قومی جنرل سکریٹری محترمہ ندھی پانڈے کمشنر سنٹرل اسکول کو بھی بھیجی ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے پارٹی کی رکن پارلیمنٹ سپریہ سولے کو خط لکھ کر اس معاملے کو پارلیمنٹ میں اٹھانے کے ساتھ دیگر پلیٹ فارم پر اٹھانے کی اپیل کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ معاملہ انتہائی اہم ہے اور اس پر توجہ دیئے جانے کی سخت ضرورت ہے۔ اگر ان بچوں کی فیس معاف نہیں ہوئی تو ان میں سے بہت سے بچے تعلیم سے محروم ہوسکتے ہیں۔

تعارف: hamslive

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*