درگا پوجا کمیٹیوں کی مالی مدد کرنے کا ممتا حکومت کا فیصلہ کوئی برا نہیں: ابھیجیت بنرجی

درگا پوجا کی تقریبات 22 اکتوبر سے شروع ہورہی ہیں۔ مغربی بنگال میں کل 37 ہزار پوجا کمیٹیاں ہیں، جنہیں ممتا حکومت نے 50 ہزار روپے دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

کلکتہ: نوبل انعام یافتہ ماہر معاشیات ابھیجیت بنرجی نےممتا حکومت کے ذریعہ ریاست کے 37 ہزار پوجا پنڈالوں کو فی کس 50 ہزار روپے دیئے جانے کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے سیفٹی پروٹوکول کو اپنانے میں معاون ثابت ہوں گی۔

ایک بنگلہ چینل کو انٹرویو دیتے نوبل انعام یافتہ ابھیجیت بنرجی نے کہا کہ ’پوجا کمیٹیوں کے حفاظتی اقدامات پر عمل کرنے پر ہونے والے اضافی اخراجات کو مدنظر رکھ کر مالی مدد کرنے کا فیصلہ کوئی برا نہیں ہے۔

درگا پوجا کی تقریبات 22 اکتوبر سے شروع ہورہی ہیں۔ مغربی بنگال میں کل 37 ہزار پوجا کمیٹیاں ہیں، جنہیں حکومت نے 50 ہزار روپے دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکومت کے اس اقدام کے خلاف کلکتہ ہائی کورٹ میں عرضی

حکومت کے اس قدم کی سخت تنقید کی گئی ہے اور اس کے خلاف سیتو لیڈر سورو دتہ نے کلکتہ ہائی کورٹ میں عرضی دائر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کے ذریعہ پوجا کمیٹیوں کی مالی مدد کرنا ہندوستان کے آئین اور دستور کے خلاف ہے۔ ہائی کورٹ نے اس پر سماعت کرتے ہوئے سخت تبصرہ کیا اور کہا کہ حکومت کیا دوسرے تہواروں عید کے موقع پر بھی اسی طرح کی مالی مدد کرتی ہے۔ حکومت نے اپنے جواب میں کہا کہ چوں کہ اس سال درگا پوجا کورونا وائرس کے بحران کے دور میں ہو رہا ہے اس لئے کورونا پروٹوکول پر عمل کرنے، ماسک اور سینیٹائزر کی خریداری کیلئے یہ فنڈ دئیے گئے ہیں۔ اس روپے کا پوجا پر خرچ نہیں ہوگا۔

کلکتہ ہائی کورٹ کی تمام پوجا کمیٹیوں کو ہدایات

کلکتہ ہائی کورٹ نے اس معاملے میں امداد پانے والے تمام پوجا کمیٹیوں کو ہدایت دی کہ وہ اس فنڈ کا ماسک، سینیٹائزر اور کمیونیٹی پولیس پر خر چ کریں۔ جبکہ دوسرے فیصلے میں کلکتہ ہائی کورٹ نے تمام درگا پوجا کمیٹیوں کو نو بفر زون قرار دیتے ہوئے کہا کہ عام زائرین کے لئے پوجا پنڈالوں میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی اور منتظمین بھی ایک مرتبہ میں 20 سے زائد افراد پوجا پنڈال میں نہیں جاسکتے ہیں۔ جسٹس سنجیب بنرجی نے کہا کہ 20 ہزار پولیس اہلکار لاکھوں افراد پر قابو نہیں پاسکتے ہیں۔

نوبل انعام یافتہ ابھیجیت بنرجی نے یہ امید بھی ظاہر کی کہ ایک سال کے عرصہ میں ہندوستانی معیشت معمول پر آجائے گی۔ ماہر اقتصادیات نے کہا کہ وبائی بیماری نے معیشت کو بری طرح متاثر کیا ہے اور انفیکشن سے حفاظت بھی اہم ہے۔ تاہم مجھے لگتا ہے کہ ایک سال کے وقفے میں ہم اپنی معیشت کو بہتر کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے ذریعہ پوجا پنڈالوں کی مدد کئے جانے سے حفاظتی پروٹوکول اور سامان خریدنے میں مدد ملے گی۔

تعارف: hamslive

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*