حکومت کی اجازت کے بغیر اسکول شروع کرنے پر ہیڈ ماسٹر کو نوٹس، محکمہ تعلیم برہم

محکمہ تعلیم کی اجازت کے بغیر کلاس شروع کرنے پر اسکول کے ہیڈ ماسٹر کو وجہ بتاؤ نوٹس جاری کیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق مغربی مدنی پور کے ایک ہائی اسکول میں کل دسویں جماعت کی باضابطہ کلاس ہوئی۔ جس میں طلبا نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

کلکتہ: مغربی مدنی پور ضلع کے داس پور میں واقع ہاتسر بیریا بی سی رائے ہائی اسکول میں دسویں جماعت کی کلاس شروع ہونے کی خبر عا م ہوتے ہی محکمہ تعلیم حرکت میں آگئی ہے۔ حکومت کی اجازت کے بغیر کلاس شروع کرنے پر اسکول کے ہیڈ ماسٹر کو وجہ بتاؤ نوٹس جاری کیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق کل یہاں دسویں جماعت کی باضابطہ کلاس ہوئی۔ جس میں طلبا نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

محکمہ تعلیم نے 24 گھنٹوں میں وجہ بتاؤ نوٹس کا جواب طلب کیا ہے۔ اس کے علاوہ محکمہ اسکول تعلیم نے مغربی مدنی پور ضلع کے اسکول انسپکٹر سے بھی 24 گھنٹے میں اس پورے واقعے پر رپورٹ طلب کیا ہے۔ سیکنڈری ایجوکیشن بورڈ کے صدر کلیان گنگو پادھے نے کہا ہے کہ رپورٹ ملنے کے بعد اسکول کے ہیڈ ماسٹر کے حلاف ضروری کارروائی بھی کی جائے گی۔ تاہم اس معاملے میں ریاستی وزیر تعلیم پارتھو چٹرجی کا کوئی تبصرہ نہیں آیاہے۔ لاک ڈاؤن نافذ ہونے کے بعد سے پورے ملک میں تعلیمی ادارے بند ہیں۔

اسکول انتظامیہ نے بتایا کہ مقامی لوگ بڑی تعداد میں ہیڈ ماسٹر کو درخواست دے رہے تھے کہ چوں کہ اس علاقے میں کورونا وائرس کا اثر کم ہے اس لئے تعلیمی سلسلہ شروع کیا جائے۔ ان درخواستوں کی بنیاد پر اسکول انتظامیہ کمیٹی کی ایک میٹنگ ہوئی۔ اس میں فیصلہ کیا گیا کہ کورونا وائرس کے انفیکشن سے متعلق تمام رہنما خطوط پر عمل کرتے ہوئے دسویں جماعت کی کلاس شروع کردی جائے۔ اس فیصلے کی بنیاد پر ہی کل بدھ کو دسویں جماعت کی کلاس شروع ہوئی۔ اسکول انتظامیہ نے کہا کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے اسکول میں تھرمل اسکریننگ، صفائی ستھرائی اور معاشرتی فاصلہ کا خیال رکھا گیا تھا۔ والدین اور طلباء بھی خوش تھے کہ اسکول میں تعلیم شروع ہوگئی ہے۔ مگر اسکول انتظامیہ نے اس کیلئے ضلع سطح کے افسران سے کوئی رابطہ نہیں کیا۔

حال ہی میں وزیر اعلی ممتا بنرجی نے کہا تھا کہ اگر صورتحال بہتر ہوئی تو 5 ستمبر سے تعلیمی ادارے کھول دئے جائیں گے۔ وزیرا علیٰ نے کہا تھا کہ پہلے مرحلے میں دسویں، گیارہویں اور بارہویں جماعت کے طلباء کیلئے اسکول کھولا جائے گا۔ گرچہ اس وقت بنگال میں کورونا کے مریضوں کی تعداد میں تیزی آئی ہے۔ تاہم ریاستی اسکول ایجوکیشن محکمہ کے عہدیداروں نے جائزہ لینا شروع کردیا ہے کہ اگر اسکول کھولے جاتے ہیں تواس کا طریقہ کار کیا ہوگا اور کس طرح کورونا سے بچے کو محفوظ رکھنے کیلئے کارروائی اور احتیاط برتے جاسکتے ہیں۔

مغربی مدنی پور کے داس پور میں واقع ہائی اسکول میں تعلیم کی شروعات نے ایک نئے تنازع کو شروع کردیا ہے۔ گرچہ حکومت نے سخت کارروائی کا اشارہ کیا ہے کہ حکومت کی اجازت کے بغیر تعلیم کیسے شروع کی گئی ہے۔ محکمہ اسکول ایجوکیشن کے مطابق جمعرات کے روز گھٹال سب ڈویڑن میں اے ڈی آئی سے پورے معاملے کی رپورٹ مانگی گئی ہے۔ اگر محکمہ تعلیم ہیڈ ماسٹر کے جواب سے مطمئن نہیں ہوتی ہے تو ہیڈ ماسٹر کو معطل کیا جاسکتا ہے۔ تاہم اسکول مینجمنٹ کمیٹی اور اسکول کے ہیڈ ماسٹر کو کسی حد تک یقین ہے کہ محکمہ تعلیم مکمل جانچ کے بعد ہی کوئی کارروائی کرے گی۔

تعارف: hamslive

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*