چین کو ہندوستان سے زیادہ امریکہ نے دیا کرارا جھٹکا

امریکی فیڈرل کمیونی کیشن کمیشن نے 5-0 کے تناسب سے ووٹ دے کر چین کی تکنیک ساز کمپنی ہواوے اور زیڈ ٹی ای کو قومی خطرہ قرار دے دیا۔ ٹرمپ حکومت نے امریکی کمپنیوں کو تکنیکی آلات خریدنے کے لئے ملنے والے 8.3 بلین ڈالر کے فنڈ کو بھی روک دیا۔

واشنگٹن / نئی دہلی: چین پر ہندوستان کی ڈیجیٹل اسٹرائک کے بعد امریکہ نے بھی ایک بڑی کارروائی کا آغاز کیا ہے، چینی کمپنیوں ہواوے اور زیڈ ٹی ای کو قومی سلامتی کے لئے خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کی کمپنیوں کو ان دونوں کمپنیوں کے سازوسامان کو ہٹانا ہوگا۔

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ پوری دنیا میں کورونا وائرس کی وبا پھیلانے کے لئے چین پر مسلسل حملہ آور ہیں اور اسی ضمن میں انہوں نے چین کی دونوں کمپنیوں کے خلاف کارروائی کی ہے۔

امریکی فیڈرل کمیونی کیشن کمیشن (ایف سی سی) نے منگل کے روز 5-0 کے تناسب سے ووٹ دے کر چین کی تکنیک ساز کمپنی ہواوے اور زیڈ ٹی ای کو قومی خطرہ قرار دیا ہے۔ صرف یہی نہیں ٹرمپ حکومت نے امریکی کمپنیوں کو تکنیکی آلات خریدنے کے لئے ملنے والے 8.3 بلین ڈالر کے فنڈ کو بھی روک دیا ہے۔

ایف سی سی نے ایک بیان میں کہا کہ ٹیلی کام کمپنیوں کو ان دونوں چینی کمپنیوں کے آلات کو انفراسٹرکچر سے ہٹانا ہوگا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکہ چین کی کمیونسٹ پارٹی کو ہرگز امریکی سلامتی کے ساتھ کھیلواڑ کرنے کی اجازت نہیں دے گا۔

واضح ر ہے کہ ہندوستان نے اتوار کی رات چین کے ٹک ٹاک سمیت 59 ایپ پر پابندی عائد کردی تھی۔ ہندوستان نے یہ قدم 15 جون کو وادی گلوان میں سرحد پر ہندوستانی فوجیوں کے ساتھ چینی فوج کی جھڑپ کے بعد اٹھایا تھا جس میں 20 ہندوستانی فوجی شہید ہوئے تھے۔ ہندوستان کی طرف سے چینی ایپ پر پابندی لگائے جانے کے بعد، چین نے اسے انتہائی تشویشناک اقدام قرار دیا ہے اور بین الاقوامی اصولوں کی دہائی دینا شروع کردیا ہے۔

تعارف: hamslive

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*