بہار سیمانچل کے سشانت سنگھ راجپوت اداکاری سے خود کشی تک

بہار کے سشانت سنگھ راجپوت بالی ووڈ سے خود کشی تک

بالی ووڈ اداکار سشانت راجپوت نے اتوار کو ممبئی کے باندرا میں واقع اپنے گھر میں پھندہ لگا کر کل خودکشی کرلی۔ خودکشی کی وجوہات کے بارے میں ابھی تک فوری طور سے پتہ نہیں چل سکا ہے۔ خود کشی کی خبر سے پورا ملک غمزدہ ہو گیا۔ سیاسی رہنماؤں، فلمی اداکاروں سے لے کر سوشل میڈیا میں عام لوگوں کے تعزیتی پیغامات کے انبار کے ساتھ دماغی صحت کی سنگینی پر ایک بار پھر بحث ہونے لگی ہے۔ وہ اصل میں بہار کے علاقہ سیمانچل کے پورنیہ ضلع کے رہنے والے تھے۔ ان کا بچپن پٹنہ میں گزرا ہے۔

سوشانت سنگھ راجپو ت کی موت پر پولس نے ان کے نوکر سے ملی اطلاع کے بعد اس واقعہ کی گزشتہ کل اتوار کو تصدیق کی تھی۔ پولس نے بتایا کہ سشانت کے گھر کے نوکر نے باندرا پولس کو واقعہ کی اطلاع دی۔ 34 سالہ اداکار ممبئی کے باندرا علاقے میں رہائش پذیر تھے آج صبح اس گھریلو نوکر نے اس کی لاش کو چھت سے لٹکا دیکھا جس کے بعد پولس کو اطلاع دی

ممبئی پولس کے ترجمان ڈپٹی کمشنر آ ف پولس پرنئے اشوک نے بتایا کہ ادکار نے خود کشی کی ہے اور پولس اس معاملے میں تفتیش کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گھریلو نوکر کی اطلاع ملنے کے بعد باندرہ پولس کی ایک ٹیم کو فوری طور پر ان کی رہائش گاہ پر روانہ کیا گیا ہے جو اس معاملے کی تفتیش کر رہی ہے لیکن پولس کو اب تک خود کشی کا کوئی خط برآمد نہیں ہوا ہے۔

پٹنہ میں غم کا ماحول

سوشانت سنگھ راجپو ت کے انتقال پر پٹنہ میں غم کاماحول ہے۔ سوشانت کا بہار سے گہراتعلق رہا ہے۔ وہ اصل میں بہار کے علاقہ سیمانچل کے پورنیہ ضلع کے رہنے والے تھے۔ ان کا نانیہال کھگڑیا ضلع میں ہے۔ سوشانت کے والد کے۔ کے سنگھ پٹنہ کے راجیو نگر واقع اپنے مکان میں ایک کیئر ٹیکر کے ساتھ رہتے ہیں۔ بیٹے کی موت کی خبر سن کر والد صدمے میں ہیں۔

سوشانت کا بچپن پٹنہ میں گزرا ہے۔ ان کی ابتدائی تعلیم پٹنہ کے سینٹ کیرنس ہائی اسکول سے ہوئی ہے۔ سوشانت مشغولیت کی وجہ سے ہمیشہ تو بہار نہیں آتے تھے لیکن اس کے بعد بھی اپنے دوستوں اور اہل خانہ سے مسلسل رابطے میں رہتے تھے۔ ان کی موت کی خبر جیسے ہی کنبہ کے لوگوں کو ملی سبھی لوگ مغموم ہو گئے۔

سوشانت کے انتقال کے بعد پٹنہ میں غم کا ماحول ہے۔ سوشانت کے بچپن کے کئی دوست بتا رہے ہیں کہ وہ ساتھ کرکٹ کھیلتے تھے، کس طرح مستی کرتے تھے، ان کے گھر پر لوگ مسلسل پہنچ رہے ہیں۔

سوشانت کے اہل خانہ میں والد کے علاوہ چار بہنیں ہیں۔ وہ سبھی بہار سے باہر رہتی ہیں۔ ان میں ایک میتو سنگھ ریاست سطحی کرکٹ کھلاڑی ہیں۔ بتایاجا رہاہے کہ چنڈی گڑھ میں رہنے والی بڑی بہن پٹنہ آکر والد کو ممبئی لے جائیںگی اور وہیں سوشانت کی آخری رسومات ادا کی جائے گی۔

ماں کے نام سشانت کی آخری پوسٹ

سشانت سنگھ راجپوت نے اپنی والدہ کے بارے میں آخری پوسٹ کیا تھا، جو اب وائرل ہو رہا ہے۔ وہ کچھ دنوں سے سوشل میڈیا سے بھی دور تھے، لیکن 3 جون کو انہوں نے اپنی آخری پوسٹ سے سبھی کو جذباتی کردیا۔

اس پوسٹ میں سوشانت نے اپنی والدہ اور اس کی اپنی تصویر کو جوڑتے ہوئے ایک کولاج بنایا، اور جس کے کیپشن میں انہوں نے لکھا “آنسوؤں سے دھواں ہوتا ماضی، مسکراہٹ کے ایک آرک بناتے خواب، اورایک لحظہ بھر کی زندگی، دونوں کے درمیان گفتگو … ماں۔”

سشانت کی والدہ کا انتقال تب ہوگیا تھاجب وہ صرف 16 سال کے تھے۔ سشانت اپنی فیملی میں اپنی ماں سے بہت قریب تھے۔ والدہ کے انتقال کے بعد وہ بہت غمزدہ تھے، اور صرف یہی نہیں، سشانت کی آخری پوسٹ بھی ماں کے لئے تھی۔

خودکشی پر تعزیتی پیغامات

وزیر اعظم نریند مودی اور وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے سوشانت سنگھ کی اس موت پر تعزیتی پیغامات روانہ کئے ہیں۔

بہار کے گورنر پھاگو چوہان اور وزیراعلیٰ نتیش کمار نے اتوار کو فلمی اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کے بے وقت موت پر گہری تعزیت کا اظہار کیا ہے۔

جناب چوہان نے اپنے تعزیتی پیغام میں کہاکہ خوبیوں سے مالا مال نوجوان فلمی اداکار سوشانت کے بے وقت انتقال سے ہندوستانی فلمی دنیا کو ناقابل تلافی نقصان ہواہے۔ کم عمرمیں ہی مسٹر سوشانت فلمی دنیا میں اپنی انوکھی پہچان بنا چکے تھے۔ سماجی امور سے جڑی ان کی فلمیں اور سریل کافی مقبول رہے ہیں۔ انہوں نے اداکار کی روح کی تسکین اور ان کے مغموم اہل خانہ اور مداحوں کو صبر کی قو ت عطا کرنے کی دعا کی ہے۔

بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار کا تعزیتی پیغام

بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے اپنے تعزیتی پیغام میں کہا ہے کہ سوشانت سنگھ راجپوت بہار کے رہنے والے تھے اور انہوں نے اپنی اداکاری کی بدولت فلمی دنیا میں بڑی پہچان بنائی تھی۔ وہ شائقین کے مابین انتہائی مقبول تھے۔ ان کی بے وقت موت سے فلمی دنیا کو ناقابل تلافی نقصان ہوا ہے۔ خدا ان کی روح کو سکون بخشے۔

مسٹر کمار نے اداکار سوشانت کی روح کی تسکین اوران کے اہل خانہ اور مداحوں کو دکھ کی اس گھڑی میں صبر کرنے کی قوت عطا کرنے کی دعا کی ہے۔

ادھر جھارکھنڈ کے وزیراعلیٰ ہیمنت سورین نے بھی فلمی اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کے بے وقت موت پر دکھ کا اظہار کیا ہے۔

مسٹر سورین نے اتوار کو کہاکہ “سال 2020 ایک مشکل سال رہا ہے۔ سبھی کو ہرممکن ایک دوسرے کی مدد کرنے کا عزم لینا چاہئے۔ میری تعزیت متاثرہ کنبہ کے ساتھ ہے۔ خدا آنجہانی کی روح کو سکون اور ان کے اہل خانہ کو دکھ کی اس گھڑی میں صبر کی قوت دے۔

مقبولیت کے بعد خود کشی

بہار سے تعلق رکھنے والے اداکار نے اپنی تعلیم پٹنہ میں مکمل کی تھی بعد میں وہ نئی دہلی پہنچے اور اس کے بعد انہوں نے ممبئی میں سکونت اختیار کرلی۔ اور وہ فلموں میں اداکاری کرنے میں جٹ گئے۔ سوشانت سنگھ راجپوت نے ’کس دیش میں ہے میرا دل‘ نامی یومیہ پروگرام میں کام کرتے تھے، لیکن انہیں ایکتا کپور کے سیریل ‘پوتر رشتہ سے شناخت ملی۔ اس کے بعد سوشانت کو بھی فلمیں ملنی شروع ہوگئیں۔

’کائے پوچھے‘ سے اپنی فلمی کیریر کی ابتدا کرنے والے سشانت نے ’’ڈیٹیکٹیو وومکیش بکشی‘، ایم ایس دھونی: دی انٹولڈ اسٹوری‘ اور ’چھیچھوڑے‘ جیسی فلموں میں اہم کردار نبھایا تھا۔ وہ عامر خان کی مشہور فلم ’پی کے‘ میں پاکستانی نوجوان کے مختصر کردار میں نظر آئے تھے اور شائقین کے درمیان مقبولیت حاصل کی تھی۔

سشانت سنگھ راجپوت کی خود کشی کی خبر سے پورا ملک غمزدہ ہو گیا۔ سوشل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارم سے لے کر واٹس ایپ سٹیٹس تک تعزیتی پیغامات کی برسات ہونے لگی۔ ٹویٹر کے ٹاپ 10 ٹرینڈز سشانت، دماغی صحت اور ڈپریشن خود کشی، وغیرہ سے متعلق تھے۔

[ہمس لائیو]

تعارف: hamslive

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*