داخلی ہوائی سفر کی تیاریاں، جلد شروع ہوں گی بین الاقوامی پراوزیں بھی

داخلی ہوائی سفر کی تیاریاں، جلد شروع ہوں گی بین الاقوامی پراوزیں بھی
داخلی ہوائی سفر کی تیاریاں، جلد شروع ہوں گی بین الاقوامی پراوزیں بھی

ہوائی سفر کی تیاریاں ایرپورٹ میں درجہ حرارت 98.7 ڈگری بھی ہوجائے توبھی ہوائی سفر نہیں کرسکیں گے۔ جون کے وسط سے جولائی کے شروع تک ہو سکتی ہیں شروع بین الاقوامی۔

نئی دہلی: دوماہ کے وقفہ کے بعد پیر کو شروع ہورہی اندرون ملک پروازکی تیاریوں کے بارے میں دہلی ہوائی اڈہ کوآپریٹ کرنے والی کمپنی دہلی بین الاقوامی ائر پورٹ لیمٹیڈ (ڈی آئی اے ایل-ڈائل)نے آج میڈیا کو بتایا کہ جسم کے درجہ حرارت کی جانچ،ہاتھوں اور جوتوں کے تلوں کے سینیٹائزیشن،سامان کی جراثیم کشی،آروگیہ سیتو ایپ میں گرین سگنل اور بورڈنگ پاس کو پرنٹ آؤٹ لینے کے بعد ہی مسافروں کو ٹرمنل عمارت میں داخل ہونے دیا جائے گا۔

مسافروں کی اسکریننگ

عام طور پر انسانی جسم کا درجہ حرارت 98.6 ڈگری فارن ہائیٹ سمجھا جاتا ہے اور 98.7 ڈگری فارن ہائیٹ ہونے پر شاید ہی دنیا کا کوئی ڈاکٹر کہے گا کہآپ کو بخار ہے۔ اس کے باوجود دہلی ائرپورٹ پر داخلہ سے قبل اگر جسم کا درجہ حرارت 98.7 ڈگری پایا گیا تو مسافر کو ٹرمنل کے اندرداخل نہیں ہونے دیا جائے گا۔

داخلے سے قبل تھرمل اسکینر سے فرنٹل درجہ حرارت کی جانچ کررہے سینٹرل انڈسٹریل سیکیورٹی فورس کے جوانوں نے میڈیا کے کچھ افراد کو 99 ڈگری فارن ہائٹ درجہ حرارت ہونے کے سبب داخلہ سے روک دیا۔ پوچھے جانے پر انہوں نے بتایا کہ 94.6 ڈگری سے 98.6 ڈگری فارن ہائٹ کے درمیان درجہ حرارت ہونے پر ہی کسی شخص کو ٹرمنل عمارت میں جانے کا حکم ہے۔ ڈائل کے سی ای او ویدیہ کمار جے پوریا نے بتایا کہ گھریلو اڑانوں پر پابندی ختم ہونے کے بعد 25مئی سے پہلی اڑان صبح 4:30 بجے روانہ ہوگی۔

حکومت نے ایک تہائی اڑانوں کی ہی اجازت دی ہے اس لئے ابھی دہلی ائرپورٹ سے روزانہ 190 پروازیں روانہ ہوں گی اور اتنی ہی یہاں آئیں گی۔ یومیہ تقریباً 20-20 ہزار مسافروں کے آنے جانے کی امید ہے۔ سبھی پروازوں کیآمدورفت بین الاقوامی ٹرمنل -3 سے ہوگی۔ اتنے مسافروں کے لئے ٹرمنل پر مناسب سہولت موجود ہے اور سماجی دوری پر بہتر طور پر عمل کیا جاسکے گا۔

25 مئی سے س داخلی ہوابازی خدمات

کورونا وائرس’کووڈ-19‘کے پیش نظر ملک میں باقاعدہ مسافر پروازوں کا سلسلہ 25 مارچ سے پوری طرح بند ہے۔ دوماہ بعد 25 مئی سے احتیاطی شرائط کے ساتھ ایک تہائی اڑانوں کی اجازت دی گئی ہے۔

مسٹر جے پوریا نے بتایا کہ ٹرمنل کے اندر کی ہوا کو صاف رکھنے کے لئے ہر10 منٹ پر پوری ہوا تبدیل کی جارہی ہے۔ ہوا کو جراثیم سے پاک کرنے کے بعد ٹرمنل کے اندرآنے دیا جارہا ہے۔

مسافروں کے ساتھ ائر پورٹ اور ائرلائنس کے ملازمین کا رابطہ کم سے کم ہو اس کے لئے متعدد اقدامات کئے گئے ہیں۔ ٹڑمنل بلڈنگ کے باہر 24’اسکین اینڈ فلائی‘مشینیں رکھی گئی ہیں۔ اگر کوئی مسافر بورڈنگ پاس کا پرنٹ لے کر نہیں آتا ہے تو یہاں اپنا ای-بورڈنگ پاس اسکین کر کے پرنٹ لے سکتا ہے۔ اس کے بعد جسم کے درجہ حرارت کی جانچ ہوگی اور پھر مسافرکو اپنے ہاتھوں کو سینیٹائز کرنا ہوگا۔

آٹو میٹیڈ سینیٹائز مشینیں لگائی گئی ہیں جس کے نیچے ہاتھ لے جاتے ہی سینیٹائزر ہاتھوں پرآجائے گا۔ بورڈنگ پاس اور شناختی کارڈ کی جانچ کے لئے دروازے کینزدیک سنٹرل انڈسٹریل سیکیورٹی فورس کا اہلکارہوگا جو ایک کانچ کی دیوار کے پیچھے کھڑا ہوگا۔ اس دروازے سے داخل ہونے کے بعد تقریباً 15-20 میٹر کے فاصلہ پر ایک دروازہ اور ہے۔ دونوں دروازوں کے درمیان جوتوں کے تلے کو جراثم سے پاک کرنے کے لئے فرش پر سینیٹائز کئے ہوئے اسفنج بچھے ہیں۔ اس کے بعد ایک مرتبہ پھر درجہ حرارت کی جانچ اور ہاتھ کو سینیٹائز کرنا پوگا۔

غرض یہ کہ ائر پورٹ پر اس طرح کے انتظامات کئے گئے ہیں کہ مسافروں اور ملازمین کا رابطہ ایک دوسرے سے کم سے کم ہو۔ بیشتر ضروری کام خودکار نظام کے ذریعہ عمل میں لائے جائیں گے۔ ائر پورٹ سے اندر داخل ہونے کے لئے ہرایک فلائٹ کی مسافروں کے لئے الگ الگ گیٹ مختص کئے گئے ہیں۔

جلد شروع ہوسکتی ہیں بین الاقوامی پراوزیں

شہری ہوابازی کے وزیر ہردیپ پوری نے آج کہاکہ اگر حالات صحیح رہے تو جون کے وسط سے جولائی کے شروع تک بین الاقوامی پروازیں شروع کی جاسکتی ہیں۔ جناب پوری نے ایک’فیس بک لائو‘سیشن میں ایک سوال کے جواب میں یہ بات کہی۔ ان سے پوچھا گیاتھا کہ اگر وبا قابو میں آجاتی ہے تو کیا اگست – ستمبر تک بین الاقوامی پروازیں شروع کی جاسکتی ہیں۔ اس کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اگر کورونا وائرس ’کوویڈ 19‘ کا انفیکشن ہمارے اندازے کے مطابق رہتا ہے اور ہماری تیاری پوری ہوجاتی ہے تو ہم اگست – ستمبر تک کیوں انتظار کریں ،ہم جون کے وسط سے جون کے آخر تک یا جولائی کے شروع میں بھی بین الاقوامی پروازیں شروع کرسکتے ہیں۔

مرکزی وزیر نے کہاکہ وندے بھارت مشن اور گھریلو پروازوں کے تجربے سے بین الاقوامی پروازوں کی تیاری کرنے میں مدد ملے گی۔ اقوام متحدہ کا بین الاقوامی شہری ہوابازی کی تنظیم بین الاقوامی پروازوں کےلئے ہدایات تیار کرنے میں مصروف ہے۔ جیسے ہی حالات معمول پر آئیں گے پروازیں شروع کرنے کی اجازت دے دی جائے گی۔

واضح رہے کہ ملک میں سبھی باقاعدہ بین الاقوامی پروازیں 22 مارچ سے اور گھریلو مسافر پروازیں 25 مارچ سے بند ہیں۔ غیر ملکوں میں پھنسے ہندوستانیوں کو لانے کےلئے ’وندے بھارت مشن‘ کے تحت سات مئی سے منتخب راستوں پر پروازیں چلائی جارہی یہں،لیکن یہ باقاعدہ تجارتی پروازیں نہیں ہیں۔ اس کے علاوہ حکومت نے 25 مئی سے گھریلو مسافر پروازوں کی اجازت دی ہے۔ اس کی شروعات ایک تہائی پروازوں سے کی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ ملک میں سبھی باقاعدہ بین الاقوامی پروازیں 22 مارچ سے اور گھریلو مسافر پروازیں 25 مارچ سے بند ہیں۔ غیر ملکوں میں پھنسے ہندوستانیوں کو لانے کےلئے ’وندے بھارت مشن‘ کے تحت سات مئی سے منتخب راستوں پر پروازیں چلائی جارہی یہں،لیکن یہ باقاعدہ تجارتی پروازیں نہیں ہیں۔ اس کے علاوہ حکومت نے 25 مئی سے گھریلو مسافر پروازوں کی اجازت دی ہے۔ اس کی شروعات ایک تہائی پروازوں سے کی جارہی ہے۔

[ہمس لائیو]

 

تعارف: hamslive

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*