بنگال میں امفان طوفان سے 72 افراد ہلاک، ایک لاکھ کروڑ روپے کا نقصان

کلکتہ: وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے آج کہا ہے”امفان طوفان“ کی وجہ سے 72 افراد کی موت ہوگئی۔ وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ کلکتہ سمیت ریاست کے مختلف علاقوں میں طوفان کی وجہ سے بڑے پیمانے پر تباہی مچی ہے۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ کورونا وائرس کی وجہ سے ہونے والے نقصانات کا صحیح اندازہ نہیں لگا ہے مگر ہمارے اندازے سے کہیں زیادہ نقصانا ت ہوئے ہیں۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ میں نے وزیر اعظم نریندر مودی سے اپیل کرتی ہوں کہ وہ سندربن علاقے کا دورہ کریں۔ہمارے لئے یہ مصیبت کی کھڑی ہے۔ مل جل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ آج وزیر داخلہ امیت شاہ نے بات کی ہے اور ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔

وزیرا عظم نے بھی کہا ہے کہ اس وقت پورا ملک بنگال کے ساتھ کھڑا ہے۔ بنگال کی مدد کیلئے کوئی بھی کمی اور کسر نہیں چھوڑی جائے گی۔ ہمارے لئے یہ چیلنجوں کا وقت اور ہم ریاست کے عوام کیلئے دعا کرتے ہیں کہ جلد سے جلد حالات معمول پر آجائیں۔

ممتابنرجی نے کہا کہ میں نے اپنی پوری زندگی میں اتنی بڑی آفت نہیں دیکھی ہے۔ وزیرا علیٰ نے کہا کہ طوفان میں اپنی زندگی کھونے والے کے اہل خانہ کو 2.5 لاکھ روپے بطور معاوضہ دیاجائے گا۔ وزیرا علیٰ نے کہا کہ زیادہ تر افراد درخت اور بجلی کے تار گرنے کی وجہ سے مرے ہیں۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ 72 میں سے 15 افراد کلکتہ سے ہیں۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ امفان طوفان بنگال کے ساحلی علاقوں سے 185 فی کلومیٹر کی رفتار سے ٹکرایا ہے۔

خیال رہے کہ کل ممتا بنرجی نے کہا تھاکہ امفان طوفان کی وجہ سے ریاست میں ایک لاکھ کروڑ روپے کا نقصان ہوا ہے۔

کلکتہ سے 135 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ٹکرایا ہے۔ بڑے پیمانے پر کئی علاقے میں درخت گرگئے ہیں اور بجلی کی سپلائی منقطع ہوگئی ہے۔ درجنوں عمارتوں میں دراڑ پڑ گئی ہے۔ کلکتہ ائیر پورٹ کو مکمل طور پر بند کردیا گیا ہے۔

شمالی بنگال اورجنوبی بنگال کے ساحلی علاقے مکمل طور پر تباہ و برباد ہوگئے ہیں۔ ممتا بنرجی نے کل کہا تھا سب کچھ برباد ہوگیا ہے۔ وزیرا علیٰ ممتا بنرجی کا دفتر نوبنو کو نقصان پہنچا ہے۔ جگہ جگہ کھڑکیاں ٹوٹ گئی ہیں۔

[یو این آئی]

urdu.hamslive.com

تعارف: hamslive

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*