سمندری طوفان ”امپھان“ 20 مئی کو مغربی بنگال۔بنگلہ دیش کی سرحد کو پار کرے گا

حیدرآباد: مغربی وسطی اور متصل مشرقی وسطی خلیج بنگال پر قائم سمندری طوفان ”امپھان“ نے گذشتہ 6 گھنٹوں کے دوران 14 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے شمال۔شمال مشرقی سمت پیش قدمی کی ہے اوریہ منگل کو 5.30 بجے اوڈیشہ کے پارادیپ کے جنوب سے تقریباً 520 کلومیٹر پر مغربی وسطی خلیج بنگال، مغربی بنگال کے ڈیگا سے 670 کلومیٹر جنوب۔جنوب مغرب اور بنگلہ دیش کے کھیم پورا سے 800 کلومیٹر جنوب۔جنوب مغرب کی سمت مرکوز ہے۔

امکان ہے کہ یہ آئندہ 6 گھنٹوں کے دوران شدید سمندری طوفان میں تبدیل ہوگا اورشمال مشرقی خلیج بنگال پر شمال۔شمال مشرق سے ہوتا ہوا مغربی بنگال۔بنگلہ دیش کی سرحد کو دیگھا اور بنگلہ دیش کے ہاتیا جزائر کے درمیان 20 مئی کی دوپہر پارکرے گا۔

اس موقع پر 155 تا 165 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے طوفانی ہوائیں چلیں گی۔ محکمہ موسمیات نے اپنے بلیٹن میں یہ بات بتائی۔ اس طوفان پر اے پی کے وشاکھاپٹنم کے ڈوپلر ویدر راڈر کی جانب سے مسلسل نظر رکھی جارہی ہے۔

محکمہ موسمیات نے اپنے بلیٹن میں کہا ہے کہ آئندہ 48 گھنٹوں کے دوران اور 21 مئی کو شمالی ساحلی اے پی اور یانم میں بعض مقامات پر 30 تا 40 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے طوفانی ہوائیں چلیں گی۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ تلنگانہ میں کچھ مقامات پر گرمی کی لہر برقرار رہے گی۔ آئندہ چار روز کے دوران شمالی ساحلی اے پی کے کچھ حصوں میں ہلکی سے اعتدال پسند بارش متوقع ہے جبکہ رائل سیما میں بدھ کے روز بارش متوقع ہے۔ آئندہ تین دن میں تلنگانہ میں سب سے زیادہ درجہ حرارت 44 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا جائے گا، جبکہ رائل سیما میں درجہ حرارت 40 سے 44 ڈگری کے قریب ریکارڈ کیا جائے گا۔

[یو این آئی]

urdu.hamslive.com