سی اے اے، این پی آر، این آر سی کے خلاف 20 فروری کو کشن گنج میں کنہیا کمار کی ریلی

کمیونسٹ پارٹی کے رہنما اور جے این یو اسٹوڈنٹس یونین کے سابق صدر کنہیا کمار 20 فروری کو سی اے اے، این پی آر اور این آر سی کے خلاف پورے ریاست بہار میں دورہ کرکے مختلف جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے اب بہار کے کشن گنج ضلع میں پہنچنے والے ہیں۔ مقامی سی پی آئی رہنما فیروز عالم اس ریلی کو منظم کرنے اور اسے کامیاب بنانے میں اہم کردار ادا کررہے ہیں۔

کشن گنج، 18 فروری (ہمس) 30 جنوری سے شروع ہونے والی ‘جن گن من یاترا’ کو شروع میں کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا کیونکہ کنہیا کمار کو ویسٹ چمپارن ضلع میں ان کی پہلی ریلی کی اجازت نہیں دی گئی تھی اور پولیس نے انہیں ریلی منعقد کرنے کی اجازت واپس لے لی تھی۔ پھر ان کے قافلہ پر کئی بار حملہ بھی ہوا۔ اب بہار کے مختلف شہروں اور اضلاع میں احتجاجی ریلیاں منعقد کرنے کے بعد وہ 20 فروری کو کشن گنج کے کافی مشہور روئی دھاسہ میدان میں ایک بہت بڑی ریلی میں شرکت کرے اور اس سے خطاب کرنے کے لئے یہاں آنے والے ہیں۔

حال ہی میں منعقدہ بہار اسمبلی کے ضمنی انتخاب میں کمیونسٹ پارٹی میں ایم ایل اے کے امیدوار فیروز عالم ریلی کو منظم کرنے اور اسے کامیاب بنانے میں کلیدی کردار ادا کررہے ہیں۔ فیروز عالم اس احتجاجی ریلی کے لئے گاؤں گاؤں اور گھر گھر مہم چلا رہے ہیں اور نہ صرف اس ریلی کی طرف لوگوں کو راغب کرنے بلکہ علاقے کے مختلف طبقات کے درمیان سی اے اے ، این پی آر اور این آر سی سے متعلق بیداری پھیلانے کے لئے بھی کوشاں ہیں۔

اس ریلی کا انعقاد انتہائی پرامن اور جمہوری طریقے سے کی جانے والی ہے، جس میں مختلف پارٹیوں کے رہنما، کارکنان اور سول سوسائٹی کے لوگ حصہ لیں گے جس میں کانگریس پارٹی کے کارکن اسلم (علیگ) بھی فعال کردار ادا کر رہے ہیں۔ کانگریس پارٹی کے لیڈر اور ایم ایل اے شکیل احمد خان بھی دورے کے آغاز سے ہی سی پی آئی رہنما کنہیا کمار کے ساتھ رہے ہیں اور کشن گنج میں منعقد ہونے والی ریلی میں بھی شریک ہوں گے۔

جناب فیروز عالم نے سیکیورٹی انتظامات کے لئے پولیس سپرنٹنڈنٹ جناب کمار آشیش اور ضلع مجسٹریٹ سے ذاتی طور پر بات چیت کی ہے اور اس کے لئے درخواست بھی دی ہے۔ جناب کمار آشیش نے صورتحال اور لوگوں کی متوقع تعداد کا تجزیہ کرکے تمام ممکنہ حفاظتی اقدامات کرنے کا وعدہ کیا ہے۔