سی سی آر یو ایم میں تغذیہ پر لیکچرکا انعقاد

سنٹرل کونسل فار ریسرچ اِن یونانی میڈیسن، نئی دہلی میں آج آیوش آڈیٹوریم، جنک پوری، نئی دہلی میں ”حمل، زچگی اور رضاعت کے مراحل میں زچہ بچہ کے لیے تغذیہ کی اہمیت“ پر لیکچر کا انعقاد کیاگیا۔ یہ لیکچر ”صحیح پوشن، دیش روشن“ کے پیغام عام کرنے کے لئے قومی ماہ تغذیہ کی ایک سرگرمی کے طور پر منعقد کیا گیا۔

نئی دہلی،27/ ستمبر (پریس ریلیز/ نیاز احمد) سنٹرل کونسل فار ریسرچ اِن یونانی میڈیسن (سی سی آریو ایم)، نئی دہلی میں آج آیوش آڈیٹوریم، جنک پوری، نئی دہلی میں ”حمل، زچگی اور رضاعت کے مراحل میں زچہ بچہ کے لیے تغذیہ کی اہمیت“ پر لیکچر کا انعقاد کیاگیا۔ یہ لیکچر ”صحیح پوشن، دیش روشن“ کے پیغام عام کرنے کے لئے قومی ماہ تغذیہ (National Nutrition Month) کی ایک سرگرمی کے طور پر منعقد کیا گیا۔
استقبالیہ خطبہ میں پروفیسرعاصم علی خان، ڈائرکٹر جنرل، سی سی آریو ایم نے تغذیہ کی کمی کے سبب پیدا ہونے والے امراض اور مسائل کے حل کے لیے ہندوستانی طبی نظاموں کے استعمال پر زور دیا۔

اس موقع پرپروفیسر وید کے۔ایس۔ دھیمان، ڈائریکٹر جنرل، سنٹرل کونسل فار ریسرچ اِ ن آیورویدک سائنسز نے بتایاکہ آیوش کے طبی نظاموں میں تغذیہ کے اوپر بہت زیادہ زور دیا گیاہے کیونکہ ان میں اشیائے خوردونوش کو یا تو غذایا دوا یا غذا اور دوا دونوں کے طور پر برتا جاتاہے۔

اپنے خصوصی لیکچر میں ڈاکٹر پرمیت کور، چیف ڈائٹیشین، آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز، نئی دہلی نے تغذیہ، غذائیت سے بھرپور اشیاء اور ابتدائی 1000دنوں میں ماں اور بچے کی غذائی ضروریات پر تفصیل سے گفتگو کی۔

اس موقع پر مہمانوں نے سی سی آریوایم کے ذریعہ منعقد مقابلہئ مضمون نویسی کے کامیاب امیدواروں کو انعامات سے نوازا۔پروگرام کا اختتام ڈاکٹر این۔شری کانت، ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل، سنٹرل کونسل فار ریسرچ اِ ن آیورویدک سائنسز کے کلمات تشکر کے ساتھ ہوا۔ اس پروگرام میں وزارت آیوش کے ماتحت تحقیقی اداروں کے افسران نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ پروگرام کی نظامت ڈاکٹر غزالہ جاوید نے کی۔